ہوا کے دوش پر اب تک دہائی دیتی ہیں

Layla

Senior Member
Apr 14, 2018
562
336
113
apnay ghar main
ہوا کے دوش پر اب تک دہائی دیتی ہیں
پرانی دستکیں اب تک سنائی دیتی ہیں

قفس کو توڑنے کی جستجو میں گزری ہے
وہ بیتی گھڑیاں مگر کب رہائی دیتی ہیں

نکل تو سکتا ہوں اسکی گلی سے میں لیکن
وہاں سے آگے نہ راہیں سجھائی دیتی ہیں

تو کیسے مانوں دلیلیں میں عقل کی سوچو
کسی کی یادیں جو پل پل صفائی دیتی ہیں

اس انتظار کو جب جب سمیٹا ہے ہم نے
بدن سے سسکیاں، آہیں سنائی دیتی ہیں

کسی کہانی کا کردار سوچ کر بنئے
حسیں کہانیاں اک دن جدائی دیتی ہیں

ہے بات بات میں منظر کشی اندھیروں کی
تمہاری آنکھیں تو روشن دکھائی دیتی ہیں

شکر گزار ہے ابرک ہجر کی راتوں کا
مرے وجود کو مجھ تک رسائی دیتی ہیں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اتباف ابرک

@Kavi @ujalaa @Untamed-Heart
 
  • Like
Reactions: Spirit and ujalaa

Kavi

Super Star
Oct 30, 2015
10,897
1,906
513
نکل تو سکتا ہوں اسکی گلی سے میں لیکن
وہاں سے آگے نہ راہیں سجھائی دیتی ہیں

تو کیسے مانوں دلیلیں میں عقل کی سوچو
کسی کی یادیں جو پل پل صفائی دیتی ہیں

ہے بات بات میں منظر کشی اندھیروں کی
تمہاری آنکھیں تو روشن دکھائی دیتی ہیں

Khoobsoorat ghazal Layla :-bd
 
  • Like
Reactions: Layla
Top
Forgot your password?