مشترک سا دکھ

ROHAAN

TM Star
Aug 14, 2016
1,898
1,521
363


مشترک سا دکھ

محبت دکھ تمہارا ہے
اسی سرخ رنگ جذبے سے
مجھے بھی زخم ملے اتنے کہ
لہو رِستا ہوا محسوس کرتی ہوں
جب تمہارے خواب
اپنی خاک چنتی ہوں
یہ تحریریں جو بنا لکھے
کسی نقاش کی ان دکھی، ان چھوئی مگر
بولتی
چیختی
اہ و بکا کرتی
کسی اک شب کی سہاگن یا کاری کی گئی
گہن کھائی
عمر رفتہ کے سیاہ و سفید سے لڑتی
کسی بنجارن کی سفر در سفر کرتی زیست کی تقصیر و تصویر کی مانند
صفحہ ء دل پر مجھے ارسال کرتے ہو
یہ تحریریں میرے اندر کہیں کسی گہرے اندھیرے کا پاتال تسخیر کرتی ہیں
محبت
گو کہ اک آسمانی سچ ھے
یہ بے لکھی
ان دکھی تحریریں اس سچ کی تردید کرتی ہیں
یہ کیسا مشترک سا دکھ ھے
واسطہ ھے، رابطہ ھے
کیا ھے
تمہارے ٹوٹتے لہجے کی کرچیاں کیونکر
مجھے اپنے دل کہ ریزوں میں بین کرتی
سسکیاں بھرتی
تشفی و تسلی کے دو لفظ کہنے سے روک لیتی ھے
کیوں ٹوک دیتی ہے
کہ تسلی کا کوئی بھی حرف نیا ایک زخم بڑھا دیگا
تمہیں پھر سے رلا دیگا
نمی نینوں کی میرے، مجھے کیوں خاک لگتی ہے
محبت کو تم صبر کا ابر لکھتے ہو
تو کس لیے آخر
دل میں آگ لگتی ہے
نہی ہونا تھا
نہی ہونا تھا مگر ہوا ہے یہ
یقین بن نہی سکتا لیکن گماں سا ھے
یہ مشترک سا دکھ لیے ھم ساتھ بیٹھے ھے
تمہاری بھیگتی پلکیں سلگتے ہونٹوں سے چنتی ہوں
تصور کہ شانے پر سر ٹیکے
کبھی خود رونے لگتی ہوں
 
  • Like
Reactions: shehr-e-tanhayi
Top
Forgot your password?