Zindagi Ke Liye

Discussion in 'Ghamgheen Shayari' started by saj_killer, Jul 26, 2008.

  1. saj_killer

    saj_killer
    Expand Collapse
    Newbie

    Joined:
    Jul 23, 2008
    Messages:
    90
    Likes Received:
    68
    جب ہاتھ سے شیشے چُھوٹے تھے
    جب دل کے رشتے ٹُوٹے تھے
    جب ٹُوٹی تھی افسانے کی کڑی
    میری یادوں میں اب تک ہے وہ گھڑی
    کچھ میں نے کہا ، کچھ تُم نے کہا
    پھر آوازوں میں زہر گُھلا
    جب کڑوی ہوئی تو بات بڑھی
    میری یادوں میں ہے اب تک وہ گھڑی
    پھر تًم نے مجھے ہرجائی کہا
    بے وفا کہا ، مغرور کہا
    پھر میں نے تمہیں بے رحم کہا
    جذبات سے تمہیں دُور کہا
    دونوں نے گڑھے الزام نئے
    ایک دوسرے کو دیئے نام نئے
    دیوار جو بیچ میں آنی تھی
    اُس کی ایسے بنیاد پڑی
    میری یادوں میں ہے اب تک وہ گھڑی
    پھر تُم نے کہا اب جو بھی ہو
    مجھے تم سے کبھی ملنا ہی نہیں
    ُپھر میں نے کہا تُم بھی سُن لو
    مجھے اس کی پرواہ ہی نہیں
    ہر رسم کو ہم نے چھوڑ دیا
    جو عہد کیا تھا توڑ دیا
    جو دل پُھولوں سے نازک تھے
    اُن میں جیسے کوئی کیل گڑی
    میری یادوں میں ہے اب تک وہ گھڑی
    تُم بھی تنہا ، میں بھی تنہا
    دن بیت گئے ، یُوگ بیت گئے
    ہم ہارے ، شکوے جیت گئے
    جس پیار کے غم میں زندہ ہیں
    کب تک اُس سے انکار کریں
    آؤ پھر سے اقرار کریں ۔۔۔۔۔۔۔


    sajid yasin
     
  2. Dark

    Dark
    Expand Collapse
    Darknes will Fall
    VIP

    Joined:
    Jun 21, 2007
    Messages:
    28,805
    Likes Received:
    12,542
    {(goodpost)}{(goodpost)}
     
  3. Waqar Hussain

    Waqar Hussain
    Expand Collapse
    M@In ALbela M@I M@sTana
    VIP

    Joined:
    Aug 12, 2008
    Messages:
    26,932
    Likes Received:
    5,548
    bohaat khoob janab nice and lovely sharing

    keep it up and thankx for sharing
     
  4. nrbhayo

    nrbhayo
    Expand Collapse
    Newbie

    Joined:
    Nov 23, 2009
    Messages:
    111,083
    Likes Received:
    9,732
    nice...
     

Share This Page