Hum andhero say bach ker chulay jatay hain

Discussion in 'Ghamgheen Shayari' started by anmol, Jul 2, 2008.

  1. anmol

    anmol
    Expand Collapse
    Newbie

    Joined:
    May 19, 2008
    Messages:
    472
    Likes Received:
    154

    ہم اندھیروں سے بچ کر چلتے ہیں


    ہم اندھیروں سے بچ کر چلتے ہیں
    اور اندھیروں میں جا نکلتے ہیں

    ایک کو دوسرے کا ہوش نہیں
    یوں تو ہم ساتھ ساتھ چلتے ہیں

    وہ کَڑا موڑ ہے ہمیں درپیش
    راستے ہر طرف نکلتے ہیں

    کتنے عیاش لوگ ہیں ہم بھی
    دن میں سو منزلیں بدلتے ہیں

    وہ ہوئیں بارشیں، کی کھیتوں میں
    کرب اُگتے ہیں، درد پلتے ہیں

    پتھروں کا غرور ختم ہوا
    اب اِنساں شرر اُگلتے ہیں

    ٹھوکریں کھا رہے ہیں صدیوں سے
    گو دِلوں میں چراغ جلتے ہیں

    احمد ندیم قاسمی

     
  2. Dark

    Dark
    Expand Collapse
    Darknes will Fall
    VIP

    Joined:
    Jun 21, 2007
    Messages:
    28,804
    Likes Received:
    12,543
    {(goodpost)}


    وہ ہوئیں بارشیں، کی کھیتوں میں
    کرب اُگتے ہیں، درد پلتے ہیں


    moja to ya acha lega
     
  3. Waqar Hussain

    Waqar Hussain
    Expand Collapse
    M@In ALbela M@I M@sTana
    VIP

    Joined:
    Aug 12, 2008
    Messages:
    26,932
    Likes Received:
    5,548
    bohaat khoob janab nice and lovely sharing

    keep it up and thankx for sharing
     
  4. nrbhayo

    nrbhayo
    Expand Collapse
    Newbie

    Joined:
    Nov 23, 2009
    Messages:
    111,082
    Likes Received:
    9,732
    boht khoob...
     

Share This Page