یوں حوصلہ دل نے ہارا کب تھا

Discussion in 'Ghamgheen Shayari' started by zero-knight, Jun 9, 2008.

  1. Dark

    Dark
    Expand Collapse
    Darknes will Fall
    VIP

    Joined:
    Jun 21, 2007
    Messages:
    28,805
    Likes Received:
    12,542



    یوں حوصلہ دل نے ہارا کب تھا
    سرطان میرا ستارا کب تھا

    لازم تھا گزرنا زندگی سے
    بِن زہر پیئے گزارا کب تھا

    کچھ پل مگر اور دیکھ سکتے
    اشکوں کو مگر گوارا کب تھا

    ہم خود بھی جُدائی کا سبب تھے
    اُس کا ہی قصور سارا کب تھا

    اب اور کے ساتھ ہے تو کیا دکھ
    پہلے بھی وہ ہمارا کب تھا

    اِک نام پہ زخم کھل اٹھے تھے
    قاتل کی طرف اشارا کب تھا

    آئے ہو تو روشنی ہوئی ہے
    اس بام پہ کوئی تارا کب تھا

    دیکھا ہوا گھر تھا پر کسی نے
    دُلہن کی طرح سنوارا کب تھا

    پروین شاکر
     
  2. Waqar Hussain

    Waqar Hussain
    Expand Collapse
    M@In ALbela M@I M@sTana
    VIP

    Joined:
    Aug 12, 2008
    Messages:
    26,932
    Likes Received:
    5,548
    bohaat khoob janab nice and lovely sharing

    keep it up and thankx for sharing
     
  3. nrbhayo

    nrbhayo
    Expand Collapse
    Newbie

    Joined:
    Nov 23, 2009
    Messages:
    111,083
    Likes Received:
    9,732
    nice jee..
     

Share This Page